Home » male sex problem » سُرعتِ انزال

سُرعتِ انزال

جنسی افعال میں نقص۔ ۔ ۔ قبل از وقت انزل ہونا(سُرعتِ انزال)

قبل از وقت انزال کی تعریف یہ ہے کہ ”عضو تناسل کو فُرج میں داخل کرنے سے پہلے یا داخل کرنے پر یا داخل کرنے کے بعد ،انتہائی کم جنسی تحریک کے نتیجے میں ،زیادہ تر صورتوں میں انزال ہوجائے”۔

اگرچہ قبل از وقت انزال ہونے کا مسئلہ نیا نہیں ہے تاہم گزشتہ دَو یا تین دہائیوں کے دوران اِس شکایت کے حامل افراد کی تعدادمیں واضح طور پر اِضافہ ہُوا ہے ۔اِس بات کے بہت سے اسباب ہو سکتے ہیں جن میں سے سب زیادہ اہم سبب عوام کی آگہی ہے۔پہلے بہت سے لوگ بنیادی طور پر آگہی کی کمی کی وجہ سے ، اِس کیفیت کو کوئی مسئلہ تصور نہیں کرتے تھے ،لیکن حالیہ برسوں میں ذرائع ابلاغ کی ترقی اور معلومات تک رسائی میں آسانی (خاص طور پر انٹر نیٹ کے ذریعے)کی وجہ سے بہت سے افراد کو اِس مسئلے کے بارے میں آگہی حاصل ہوگئی ہے اور وہ علاج کے لئے رجوع کرتے ہیں۔

یہ بھی دیکھا گیا ہے کہ یہ مسئلہ نوجوان نسل میں زیادہ عام ہوتا جارہا ہے اور ماہرین کو یقین ہے کہ اِس کیفیت کا ایک بڑاسبب عُریاں فلمیں/تصاویر ہیں۔جب کوئی فرد عُریاں فلمیں/تصاویر دیکھنے کا عادی ہوجاتا ہے تو اِس مسئلے کا بھی آغاز ہوجاتا ہے۔عُریاں فلموں/تصاویر کا عادی ہوجانے کی صورت میں دَو طرح سے نقصان ہوتا ہے یعنی نفسیاتی لحاظ سے اور جسمانی افعال کے لحاظ سے۔

اِن فلموں اور تصاویر میں دِکھائے جانے والے بہت سے مناظر حقیقی نہیں ہوتے بلکہ غیر فطری بھی ہوتے ہیں۔بہت سے نوجوانوں کے ذہن میں یہ مناظر حقیقی مناظر کے طور پر نقش ہونے لگتے ہیں اور وہ انہیں نارمل سمجھنے لگتے ہیں۔ پھر جلد ہی وہ مرحلہ آتا ہے جب وہ اپنے جسم اور اپنی صلاحیتوں کا اِن غیر حقیقی تصویری خاکوں (graphics) سے موازنہ کرنا شروع کر دیتے ہیں ۔بالآخر اُن کے ذہن میںلاشعوری طور پر پیچیدگیاںاوراُلجھنیں پیدا ہونے لگتی ہیں ۔یہ صورت حال جلد ہی جسمانی طور پر ،جنسی مسائل مثلأٔ عضو تناسل میں تناؤ کی کمی اور قبل از وقت انزال ہونے کی صورت میں ظاہر ہونے لگتی ہے۔

اِس کے علاوہ ،عُریاں فلموں/تصاویر کا عادی ہوجانے کے بعد ،دِماغ میں پائے جانے ایسے خلیات جو جنسی کیمیائی اجزائ(serotonin) تیار کرتے ہیں ،ان افعال اور ان کی تعدا میں اِضافہ ہوجاتا ہے ۔یہ کیمیائی اجزاء جنسی دورانئے کے مختلف مراحل میں کام آتے ہیں۔عُریاںفلموں /تصاویر دیکھنے کا عادی ہونے کی صورت میں ، معمولی جنسی تحریک مثلأٔ چُھونے سے بھی یہ جنسی کیمیائی اجزاء اچانک اور زیادہ مقدار پیدا ہوجاتے ہیں جس کے نتیجے میں جنسی دورانیہ جلد ختم ہوجاتا ہے اورنتیجے کے طور پر انزال قبل از وقت ہوجاتاہے ۔

اگرچہ خود لذّتی کا عمل بذاتِ خود نقصان دہ نہیں ہوتا تاہم عُریاں فلموں/تصاویر دیکھنے کے دوران خود لذّتی کا عمل کرنے سے یہ ضرور نقصان دہ ثابت ہوتا ہے ۔اِس کی وجہ سے دِماغ اور جنسی اعضاء کے درمیان سگنل کا تبادلہ کچھ اِس طرح ہوتا ہے کہ طویل عرصے تک انزال کی صلاحیت ختم ہوجاتی ہے ۔ اِس طرح قبل از وقت انزال کی کیفیت مزید خراب ہوتی ہے ۔ ۔

کیوں کہ اِس مسئلہ میں نفسیاتی اور جسمانی افعال دونوں شامل ہوتے ہیں لہٰذا اِن دونوں عوامل کے عدم توازن کو درست کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

اِس کیفیت کے علاج میں ،خاص طور پر اگر اِس کا سبب عُریاں فلمیں/تصاویر ہوں تو اِن سے مکمل اجتناب ضروری ہے ۔دِیگر عادتوں کی طرح ، عُریاں فلموں/تصاویر کو ترک کرنے پر بھی ذہن میں تناؤ کی کیفیت پیدا ہوتی ہے تاہم مضبوط قوت اِرادی اور عزم کے ذریعے مطلوبہ ہدف حاصل کرنا ممکن ہے۔

کسی فرد میں قبل از وقت انزال کی شکایت پیدا ہونے کا سبب خاص طور پر عُریاں فلموں/تصاویر کو دیکھنے کے دوران خود لذّتی کا عمل کرنے سے دِماغ اور جنسی اعضاء کے درمیان سگنل کا نظام متاثر ہونا ہے ۔ یہ کیفیت ایسے نوجوانوں میں پیدا ہوتی ہے جن کا واحد مقصد، جنسی ہیجان کی انتہائی کیفیت (orgasm)کو جلد سے جلد حاصل کرنا ہوتا ہے تاکہ ذہنی اور جسمانی تناؤ کو ختم کیا جاسکے ۔اِس عمل کے نتیجے میں رفتہ رفتہ دِماغ کو اِس بات کا عادی بنا دیتا ہے کہ وہ جنسی کیمیائی اجزاء کو تیزی سے اور زیادہ مقدار میں بنانے لگتا ہے اور اِس طرح جنسی ہیجان کی انتہائی کیفیت (orgasm)جلد حاصل ہوجاتی ہے۔یہ کیفیت جلد ہی قبل از وقت انزال کی صورت اختیار کر لیتی ہے ۔لہٰذا قبل از وقت انزال کی کیفیت کا علا ج ادویات سے نہیں بلکہ اِس مسئلے کے علاج کا واحد طریقہ یہ ہے کہ دِماغ کو ازسرنو تربیت دی جائے وہ جنسی ردِّعمل میں تیزی نہ کرے اور جنسی ہیجان کی انتہائی کیفیت (orgasm)کو جلد نہ پہنچ جائے۔

یہ مقصد حاصل کرنے کے ماہرین نے مختلف طریقے وضع کئے ہیں مثلأٔ زیر کنٹرول خود لذّتی کا عمل، جسمانی طور پر انزال کو بلاک کرنا، اور اپنی ساتھی کے ساتھ” شروع کرنے اور رُکنے ”کا طریقہ اختیار کرنا۔

زیرِکنٹرول خود لذّتی کا عمل

اِس طریقے میں اپنی ساتھی کی مدد کی ضرورت نہیں ہوتی۔یہ طریقہ قبل از وقت انزال کوختم کرنے کا بہت مؤثر طریقہ ہے ۔متعلقہ فرد کو بہت نہایت صبر اور ثابت قدمی کے ساتھ رفتہ رفتہ اپنے جسم کوقبل از وقت انزال سے روکنے کی تربیت دینا ہوتی ہے۔

اِس طریقے کے تحت متعلقہ فرد کو،پرسکون ماحول میں ہفتے میں کم از کم تین بار خود لذّتی کا عمل کرنا ہوتا ہے ،لیکن 6 مرتبہ سے زیادہ نہیں ۔یہ عمل ذہنی طور پر تھکن ،تشویش اور فکرمندی کی صورت میں نہیں کرنا چاہئے ۔یہ عمل کرنے سے پہلے اپنے ذہن کو ہر قِسم کے فکر سے فارغ کیجئے ۔اِس عمل میں کم از کم آدھے گھنٹے کا وقت صَرف کیجئے۔

جب آپ بالکل پر سکون ہو جائیں تو لیٹ کر خود کو تحریک دینا شروع کیجئے ۔اپنے ذہن کو کچھ اور سوچنے میں ملوث نہیں کیجئے کیوں کہ بنیادی خیال یہ ہے کہ ابتدائی چند مواقع کے دوران آپ اُن تمام احساسات سے آگاہ ہوں آپ کے جنسی اعضاء کو تحریک ملنے کے نتیجے میں پیدا ہوتے ہیں اور جیسے جیسے آپ جنسی ہیجان کی انتہائی کیفیت (orgasm)کو پہنچتے ہیں۔

خود کو تحریک دینے کے دوران نرمی سے کام لیجئے اور جلد بازی نہ کیجئے ۔قبل از وقت انزال کی توقع سے خوف زدہ نہ ہوں۔بس پرسکون رہئے اور اپنے جنسی اعضاء سے حاصل ہونے والے تمام احساسات کو محسوس کرنے کی کوشش کیجئے۔انزال کے قریب ،بہت سے افراد اپنے جسم کے عضلات میں تناؤ پیدا کر لیتے ہیں اور وہ کم گہرے سانس لینے لگتے ہیں تا کہ وہ اسے مؤخر کر سکیں۔جب کہ ایسا کرنے سے معاملہ مزید خراب ہوجاتا ہے کیوں کہ اِس طرح جنسی اعضاء میں خون کی زائد مقدار داخل ہو نے لگتی ہے اور نتیجے کے طور پر قبل از وقت انزال ہوجاتا ہے۔معمول کے مطابق سانس لینے کی کوشش کیجئے اور اپنے تمام جسم کے عضلات میں تناؤ پیدا نہ ہونے دیجئے ۔ جب آپ یہ محسوس کریں کہ آپ کے جسم کے کسی حِصّے میں تناؤ پیدا ہو رہا ہے تو متعلقہ حِصّے پر توجہ دیجئے اور وہاں سے تناؤ ختم کرنے کی کوشش کیجئے ۔اِس کے علاوہ جنسی اعضاء کی تحریک کی رفتار میں ردّبدل کیجئے (لیکن بہت تیزی سے کبھی تحریک نہ دی جائے )۔ آپ کا مقصد یہ ہے کہ آپ اُس مرحلے کو جان جائیں جس کے بعدآپ اپنے انزال کو کنٹرول نہیں کر سکیں گے (ناقابلِ واپسی مرحلہ)اور آپ کو اِس مرحلے تک پہنچنے سے پہلے خود کو تحریک دینے سے رُکنا ہوگا۔انتظار کیجئے یہاں تک کہ آپ کے عضو تناسل کا تناؤ تقریبأٔ آدھا رہ جائے ،اِس کے بعد دوبارہ یہ دورانیہ شروع کیجئے۔بعض افراد کے لئے یہ مرحلہ بہت جلد آجائے گایعنی تحریک دینے کاعمل شروع ہونے سے 20 یا 30سیکنڈ میں۔ایسے افراد کو فکرمند ہونے کی ضرورت نہیں بلکہ اُنہیں یہ مشق جاری رکھنا چاہئے۔اِس عمل کے ہرموقعے پر ،اُنہیں ناقابلِ واپسی مرحلے پر پہنچنے سے پہلے رُکتے ہوئے ، کم از کم 6 مرتبہ اپنے انزال کو روکنا چاہئے ۔اِس کے بعد وہ انزال کر سکتے ہیں۔6دورانیوں سے پہلے انزال ہوجانے کی صورت میں ،یہ عمل اُسی روز دوبارہ نہیں کرنا چاہئے۔اِس مشق کو جاری رکھنے کے ساتھ کچھ عرصہ بعد ایسے افراد یہ محسوس کریں گے کہ خود کو تحریک دینے کا آغاز کرنے اور ناقابلِ واپسی مرحلے تک پہنچنے کے درمیانی وقفے میںرفتہ رفتہ اِضافہ ہو رہا ہے ۔تاہم یہ نتائج ایک یا دَو روز میں حاصل نہیں ہوں گے۔ذہن کی از سرنو تربیت میں کئی ہفتوں کا وقت لگ سکتا ہے ۔اِس کے بعد ہی مطلوبہ نتائج حاصل ہو سکیں گے۔اِس مشق کے ذریعے جلد ہی متعلقہ فرد اپنے لئے انزال ہونے کا وقت مقرر کر سکتا ہے ۔ماہرین کی تجویز یہ ہے کہ متعلقہ فرد کو رفتہ رفتہ ایک گھنٹہ (60منٹ) کے وقت میں ،انزال ہونے سے پہلے ،خود کو تحریک دینے اور رُکنے کے 6دوانئے مکمل کرنا چاہئیں۔

نامی عضلہ بھی اِس سلسلے میں کافی معاون ثابت ہوتا ہے ۔یہ عضلہ پیشاب کی نالی کے گِرد لپٹا ہوتا ہے ۔یہ عضلہ تناؤ کی حالت میں پیشاب کی نالی پر دباؤ ڈال کر اِسے بند کردیتا ہے ۔مشق کے ذریعے اِس عضلے کو قوی بنایاجاسکتا ہے۔پیشاب کرنے کے دوران اُسے روکنے کی صورت میں اِس عضلے کومحسوس کیا جاسکتا ہے۔یہی عضلہ جو پیشاب کو روکتا ہے PCعضلہ کہلاتا ہے ۔ایک بار اِس عضلے کا اندازہ ہوجانے کے بعد،پیشاب نہ کرنے کی صورت میں بھی آپ اِس میں تناؤ پیدا کر سکتے ہیں۔ اِس عضلے کو 3 سیکنڈ تک تناؤ کی حالت میں رکھنے اور پھر 3سیکنڈ تک اِسے ڈھیلا رکھنے اور پھر یہ عمل 10بار کرنے کو کیجل/کیگل مشق کہا جاتا ہے ۔یہ ایک بہت آسان اور مؤثر مشق ہے جسے کسی بھی وقت کیا جا سکتا ہے ،روزانہ کم از کم3بار۔اِس مشق کے ذریعے PCنامی عضلہ واقعی قوی ہو جاتا ہے ۔اِس طرح جب متعلقہ فرد نا قابلِِ واپسی مرحلے تک پہنچنے لگتا ہے تو یہ عضلہ انزال کو روکتا ہے۔

جب موزوں حد تک کنٹرول حاصل ہوجائے تو اِس کے بعد ‘آغاز کرنے اور رُکنے’ کے طریقے کو اپنی ساتھی کے ساتھ اختیار کیا جا سکتا ہے ۔

آغاز کرنے اور رُکنے کا طریقہ

  1. خاتون ساتھی کو آہستہ آہستہ اپنے مَرد ساتھی کو تحریک دینا شروع کرنا چاہئے اور جیسے ہی مَرد جوش میں اِضافہ محسوس کرے جس کے نتیجے میں انزال ہونا مؤخر نہ کیا جاسکے تو خاتون کو رُک جانا چاہئے ۔
  2. اِس کے بعد خاتون کو مَرد کے عضو تناسل کے سَر کے پیچھے والی جگہ کو دبانا چاہئے ،زیادہ تر عضو تناسل کے نچلے حِصّے کی جانب سے دبانا چاہئے۔ایسا کرنے سے کچھ بے آرامی ہو سکتی ہے لیکن اِس عمل میںدرد نہیں ہونا چاہئے۔ (یہ عمل کس طرح کیا جاتا ہے اور عضو تناسل کو کس طرح پکڑنا چاہئے ،یہ دیکھنے کے لئے اِس لِنک پر جائیے
  3. جب مَرد یہ محسوس کرے کہ اب انزال قریب نہیں ہے تو پھر سے تحریک دینے کا عمل شروع کیا جانا چاہئے۔
  4. اِس عمل کو کم از کم10بار یا اِس سے زائد مرتبہ دُہرانا چاہئے اور اِس کی مشق کرنا چاہئے ۔ فُرج کی چکناہٹ سے مماثلت پیدا کرنے کے لئے ،عضو تناسل پر ‘کے وائی ‘ جیلی لگائی جا سکتی ہے ۔ (اِس طریقے سے اکثر مَرد یہ محسوس کرتے ہیں کہ اب اُن کے لئے فوری انزال ہوجانے کی پہلے جیسی کیفیت میں کمی آگئی ہے)
  5. ایک عرصے تک اِس طریقے کی مشق کرنے کے بعد ، متعلقہ جوڑا ایک دُوسرے کی جانب رُخ کر کے اِس طرح بیٹھ جائے کہ عورت کی ٹانگیں ،مَرد کی ٹانگوں کے اُوپر ہوں۔وہ مَرد کے عضو تناسل کو اپنی فُرج کے مُنہ سے قریب تحریک دے کر اور بعد میں اپنی فُرج کے مُنہ سے رگڑتے ہوئے تحریک دے سکتی ہے۔جب بھی مَرد جوش میں زیادتی محسوس کرے تو عورت عضو تناسل کو دبانے والا طریقہ اختیار کر سکتی ہے اورپھر ہر قِسم کی تحریک کو روک دینا چاہئے یہاں تک کہ مَرد کے جوش میں کافی کمی آجائے ۔اِس کے بعد یہ عمل پھر دُہرایا جائے۔یہ دورانیہ 6 مرتبہ کیا جانا چاہئے ۔

آخر کار ،جنسی ملاپ کی کوشش کرنا چاہئے۔اِس جنسی ملاپ میں عورت کو مَرد کے اُوپر ہونا چاہئے تا کہ وہ ضرورت پڑنے پرفوری طور پر علحیدہ ہوجائے اور عضو تناسل کو دبانے والا طریقہ اختیار کرے ۔،تاکہ مَرد میں انزال ہوجانے کی کیفیت کو ختم کیا جاسکے ۔

انزال ہونے کو جسمانی طور پر بلاک کرنا

بعض افراد میں قبل از وقت انزال ہوجانے کا مسئلہ بہت سنگین نوعیت کا نہیں ہوتا ۔ایسے افراد جب انزال کامرحلہ قریب محسوس کرتے ہیں تووہ اپنی پیشاب کی نالی کے اندرونی حِصّے کو بلاک کرکے انزال کو مؤخر کر سکتے ہیں۔پیشاب کی نالی کے اندرونی حِصّے کو آسانی سے خُصیوں کی تھیلی (scrotum)اور مقعد (anus)کی درمیانی جگہ میں پایا جا سکتا ہے ۔ اِس مقام پر اُنگلیوں کی مدد سے مناسب دباؤ ڈالنے سے انزال کو مؤثر طور پر روکا جاسکتا ہے اور اِس طرح جنسی ملاپ کی مُدّت کو بڑھایاجا سکتا ہے۔