Home » Histamine

Histamine

ناک کی الرجیAntibody-antigenBindingLg
1. الرجی کے معنی کسی چیز کے خلاف رد عمل ظاہر کرنا ہے۔
1. یہ دوسرے آدمی کے لئے پریشانی کا باعث بنتی ہے۔
3. یہ عمل antijin anti bodyکے سبب رونما ہو تا ہے۔
4. حساسیت کا ہونا ، قوت دفع کا غیر مکمل او ر ناقص ہونے کو ظاہر کرتا ہے۔
5. الرجی کسی بھی طر ح پیدا ہو سکتی ہے، الرجی چیزوں سے دواؤں سے ،خوراک سے، سامانِ آرائش سے، پوشاک اور histamine سے الرجی ہو جا تی ہے، histamine جسم میں ایسا مادہ پیدا کرتا ہے جس سے آدمی پریشان ہو جاتاہے۔
6. اکزیما ، خارش، پھنسیاں اور بخار اسی الرجی کی وجہ سے ہوجاتی ہے، بعض ا وقات مائجن دیر سے عمل کرتے ہیں، او ر الرجی کی علامت دیر سے ظاہر ہو تی ہے، مثلاً ہڈیو ں کا ورم ، مثانہ کا ورم، اور شریانوں کا ورم کی وجہ سے ہیں۔
الرجی کے علامات
اگر مریض کو بار بار چھینکیں آئیں تو سمجھ لو کہ اس کو ناک کی سوزش ہے ، بعض دفعہ چھینکیں لگا تار ایک گھنٹہ تک جاری رہتی ہے ، اس انفکشن سے ناک کی اندرونی جھلّی متورم ہو جاتی ہے، ناک بہتی رہتی ہے یہ کان کی اندرونی جھلی تک پھیل سکتی ہے ، مریض کا گلا بند ہو جاتا، کبھی کبھی ناک سے متعفن رطوبت نکلتی ہے بعض دفعہ رطوبت کے ساتھ خون بھی آتا ہے۔ ناک کی سوزش موسمی بھی ہو تی ہے، اس کو hayfeverکہتے ہیں ، یہ دوسری الرجی والی بیماریوں سے زیادہ ہو تی ہے ، یہ سال کے دوسرے حصے جون جولائی میں ہو تی ہے ، ناک میں خارش چھینکیں آنا اور ناک سے پانی کی طرح رطوبت کا بہنادردناک علامت ہیں، بعض اوقات آنکھوں ،کانوں اور تالو میں بھی زبردست خارش ہو تی ہے اس کے 20%مریضوں کو موسمی دمہ ہو جاتا ہے ، مریض کی ناک بند ہو جاتی ہے اور اسے سونگھنے اور چکھنے کا احساس تک نہیں ہوتا۔ناک کی سوزش سے بچاؤ کے لئے الرجک چیزیں جیسے مٹی، گردوغبار اور دھواں وغیرہ سے بچاؤ کرنا چاہئے، گھر میں کیڑے مکوڑے اور اور sink کو چھڑکاؤ کے ذریعہ ختم کریں۔
الرجی کے اسباب
1. دم کشی
سونگھنے والی اشیاء تنافس کے آلات میں الرجی پیدا کرتی ہے، ان میں گردوغبار ، سبزیوں کے چھوٹے چھوٹے چھلکے ، کھال کے ریشے ،تمباکو کا دھواں،بس کا دھواں،کارخانوں کا دھواں،بدبو دار گلی سڑی چیزیں ،سبزیاں وغیرہ۔
2.کھانے کی اشیاء
ہر آدمی کا اپنا ٹیسٹ ہو تا ہے جو خوراک ٹیسٹ کے خلاف ہو اس سے الرجی ہو جاتی ہے، خوراکوں میں مچھلی ، گوشت، مغزیات، دالیں وغیرہ کسی کو مچھلی پسند ہو تی ہے اور کسی کو ناپسند ،چنانچہ اس کی بو سے الرجی ہو جائے گی۔
3. بعض چیزیں ایسی ہو تی ہیں کہ ان کو چھونے سے الرجی پیدا ہو جاتی ہے۔
4. یہ علامت جلد پر فوراً ظاہر ہوتے ہیں ، جلد پر چھوٹے چھوٹے دانے نکل آتے ہیں لرزش پیدا ہو جاتی ہے، خارش پیدا ہو جاتی ہے، جڑی بوٹیا ں اور پودے بھی اس گروپ میں شامل ہیں، پلاسٹک ،ربڑ، پولیتھین ، پھول ، رنگ،لکڑی،آب وہوا، مٹی، دھول، پاؤڈر، خوشبو دار چیزیں وغیرہ الرجی کا باعث بنتی ہیں۔
قدرتی علا�آْایک مطالعہ کے مطابق 147کیسوں میں یہ تحقیق کی گئی ہے سانس کے معاملات تشویشناک تھے۔
ناک کی الرجی
1. الرجی کے معنی کسی چیز کے خلاف رد عمل ظاہر کرنا ہے۔
1. یہ دوسرے آدمی کے لئے پریشانی کا باعث بنتی ہے۔
3. یہ عمل antijin anti bodyکے سبب رونما ہو تا ہے۔
4. حساسیت کا ہونا ، قوت دفع کا غیر مکمل او ر ناقص ہونے کو ظاہر کرتا ہے۔
5. الرجی کسی بھی طر ح پیدا ہو سکتی ہے، الرجی چیزوں سے دواؤں سے ،خوراک سے، سامانِ آرائش سے، پوشاک اور histamine سے الرجی ہو جا تی ہے، histamine جسم میں ایسا مادہ پیدا کرتا ہے جس سے آدمی پریشان ہو جاتاہے۔
6. اکزیما ، خارش، پھنسیاں اور بخار اسی الرجی کی وجہ سے ہوجاتی ہے، بعض ا وقات مائجن دیر سے عمل کرتے ہیں، او ر الرجی کی علامت دیر سے ظاہر ہو تی ہے، مثلاً ہڈیو ں کا ورم ، مثانہ کا ورم، اور شریانوں کا ورم کی وجہ سے ہیں۔
الرجی کے علامات
اگر مریض کو بار بار چھینکیں آئیں تو سمجھ لو کہ اس کو ناک کی سوزش ہے ، بعض دفعہ چھینکیں لگا تار ایک گھنٹہ تک جاری رہتی ہے ، اس انفکشن سے ناک کی اندرونی جھلّی متورم ہو جاتی ہے، ناک بہتی رہتی ہے یہ کان کی اندرونی جھلی تک پھیل سکتی ہے ، مریض کا گلا بند ہو جاتا، کبھی کبھی ناک سے متعفن رطوبت نکلتی ہے بعض دفعہ رطوبت کے ساتھ خون بھی آتا ہے۔ ناک کی سوزش موسمی بھی ہو تی ہے، اس کو hayfeverکہتے ہیں ، یہ دوسری الرجی والی بیماریوں سے زیادہ ہو تی ہے ، یہ سال کے دوسرے حصے جون جولائی میں ہو تی ہے ، ناک میں خارش چھینکیں آنا اور ناک سے پانی کی طرح رطوبت کا بہنادردناک علامت ہیں، بعض اوقات آنکھوں ،کانوں اور تالو میں بھی زبردست خارش ہو تی ہے اس کے 20%مریضوں کو موسمی دمہ ہو جاتا ہے ، مریض کی ناک بند ہو جاتی ہے اور اسے سونگھنے اور چکھنے کا احساس تک نہیں ہوتا۔ناک کی سوزش سے بچاؤ کے لئے الرجک چیزیں جیسے مٹی، گردوغبار اور دھواں وغیرہ سے بچاؤ کرنا چاہئے، گھر میں کیڑے مکوڑے اور اور sink کو چھڑکاؤ کے ذریعہ ختم کریں۔
الرجی کے اسباب
1. دم کشی
سونگھنے والی اشیاء تنافس کے آلات میں الرجی پیدا کرتی ہے، ان میں گردوغبار ، سبزیوں کے چھوٹے چھوٹے چھلکے ، کھال کے ریشے ،تمباکو کا دھواں،بس کا دھواں،کارخانوں کا دھواں،بدبو دار گلی سڑی چیزیں ،سبزیاں وغیرہ۔
2.کھانے کی اشیاء
ہر آدمی کا اپنا ٹیسٹ ہو تا ہے جو خوراک ٹیسٹ کے خلاف ہو اس سے الرجی ہو جاتی ہے، خوراکوں میں مچھلی ، گوشت، مغزیات، دالیں وغیرہ کسی کو مچھلی پسند ہو تی ہے اور کسی کو ناپسند ،چنانچہ اس کی بو سے الرجی ہو جائے گی۔
3. بعض چیزیں ایسی ہو تی ہیں کہ ان کو چھونے سے الرجی پیدا ہو جاتی ہے۔
4. یہ علامت جلد پر فوراً ظاہر ہوتے ہیں ، جلد پر چھوٹے چھوٹے دانے نکل آتے ہیں لرزش پیدا ہو جاتی ہے، خارش پیدا ہو جاتی ہے، جڑی بوٹیا ں اور پودے بھی اس گروپ میں شامل ہیں، پلاسٹک ،ربڑ، پولیتھین ، پھول ، رنگ،لکڑی،آب وہوا، مٹی، دھول، پاؤڈر، خوشبو دار چیزیں وغیرہ الرجی کا باعث بنتی ہیں۔
قدرتی علا�آْایک مطالعہ کے مطابق 147کیسوں میں یہ تحقیق کی گئی ہے سانس کے معاملات تشویشناک تھے۔
تشخیص اور علاج سے کامیابی کی شرح 87.6%تھی، ا ن میں کثرت سے کمزور نظر کے لوگوں پر جانچ کی گئی ۔بڑے شہروں میں یہ پایا گیا کہ فروری سے مئی تک علاقائی موسم کی درجۂ حرارت عام حالات میں ایک دوسرے کے متبادل رہتے ہیں۔
الرجی کے 26سے 63 سال تک کی عمر کے 40مر دوخواتین کو جن کی حالت بہت تشویشناک تھی،4ہفتوں تک حکیم ہاشمی کے زیر علاج ان کی حالت میں حیرت انگیزاصلاح ہوئی۔
حکیم ہاشمی نے کافی مریضوں کو اس مرض سے غیر معمولی نجات دلانے کا اعزاز حاصل کیا ہے۔انتہائی حساس ناک سوزش، کثرت سے چڑچڑا پن ہونا، ایسے امراض حکیم صاحب کے بیش بہا نسخوں کے ذریعہ بالکل جڑ سے ختم ہوجاتے ہیں، اور لاکھوں مریض فیضیاب ہو چکے ہیں۔
ہاشمی دواخانہ نے اس حساس مرض کو ختم کرنے کے لئے اپنے 85 سالہ تجربات محنت اور لگن سے یہ ثابت کر دیا ہے کہ اس بیماری کو شکست دینے اور ذہنی اطمینان حاصل کرنے میں کوئی رُکاوٹ حائل نہیں ہو سکتی۔
مرض کی شدت کو جلد سمجھنا اور اس کا بہتر علاج کرنا ہی ہماری اولین مقصد رہا ہے ، انتہائی حساس ناک سوزش کے علاج کے واسطے آپ اپنا و قت اور اپنی رقم کہیں اور ضائع نہ کریں اور صحیح قدم اٹھا کر اس خطرناک مرض سے نجات حاصل کریں۔

Vaginal-tightening,-Kegel-Exercises,-Sexual-problems-in-men,-Increase-Your-Peni-Size‎

Leave a Reply