Home » Leucorrhoea

Leucorrhoea

لیکوریا کی بیماری عورت کے لئے اتنی ہی خطرناک ہے جتنی کے مرد کے لئے جریا ن کی بیماری۔یہ عورت کو خراب کرکے اسے ہڈیاں کا ڈھانچہ بنا دیتی ہے۔یہ بیماری نہ صرف بدن کو نقصان پہنچاتی ہیبلکہ تولیدی نظام میں رخنہ اندازی کرکے عورت کو بے اولادی یعنی بانجھ پن میں مبتلا کر دیتی ہے لیکوریا کی تکلیف رحم (بچہ دانی)کی اندرونی جھلی میں ورم پیدا ہونے سے ظہور پذیر ہوتی ہے leucorrhea-white-discharge
جس کے نتیجے میں رحم (بچہ دانی)سے لیسدار پانی خارج ہوتا رہتا ہے جس کی وجہ سے عورت کو نہایت کوفت اور بیچینی سی رہتی ہے۔اگر شروع میں ہی اس کے علاج پر توجہ نہ دی جائے تو بیماری بگڑنے لگتی ہے اور پھر اس کی علامات میں شدت آجانے سے مریضہ کے لئے پریشانی بڑھ جاتی ہے۔لیکوریا کے باعث مریضہ کی ٹانگوں اور کمر میں ہر وقت درد رہتا ہے،گردن اور کمر کے پٹھے اکڑ جاتے ہیں،پنڈلیوں میں کھچاؤ اور بے چینی رہتی ہے،بھوک کم ہو جاتی ہے،چہرے کی سرخی زردی میں بدل جاتی ہے،بینائی گرنے لگتی ہے،سر چکراتا ہےperiod،جلد پر کھردرا پن اور خشکی نظر آنے لگتی ہے،ہر وقت تھکن ،سستی اور بیزاری کی وجہ سے جوئی کام بھی ٹھیک طرح سے نہیں ہو پاتا۔عورت ہمہ وقت متفکر اور بے سکون نظر آتی ہے۔اس کیفیت اور منفی علامات کے ساتھ ساتھ اس بیماری کاسب سے ہولناک اور پریشان کن پہلو یہ ہے کہ عورت بانجھ پن میں مبتلا ہوکر اولاد جیسی بے مثل دولت سے محروم ہو جاتی ہے۔بعض خواتین اس بیماری کو کچھ زیادہ اہمیت نہیں دیتیں اور باقاعدگی سے علاج کروانے کے بجائے گھریلو ٹوٹکوںیا پھر دائیوں سے دوائیاں لے کر استعمال کرتی ہیں جس سے بیماری تو پوری طرح ٹھیک نہیں ہوتی البتہ بیماری میں پیچیدگی ضرور آجاتی ہے جس کے باعث اولاد سے محرومی ہو سکتی ہے۔

وریدوں-کے-پھولنے-سے-مریض-کے-فوطوں-میں-بھاری-پن

Leave a Reply